Skip to main content

Posts

Showing posts with the label Barish Poetry

Taiz Hawa aur shab bhar barish - Sad Barish Poetry

  Taiz Hawa aur shab bhar barish andar chup aur bahar barish aisay pehlay kab barsi theen ankhen aur barabar barish sahra to pyase ka piyasa aur bharay darya par barish is sur-taal ka aur maza tha kachay GharTaiz ki chhat par barish jhoom rahay hain bheeg rahay hain pair parinday manzar barish mein ne baadal ko bhaije thi ik kaghaz par likh kar barish mere ashkon se likhay ko woh parhta hai aksar barish kon yeh dekhe dida-e-par num ik Barish ke Andar barish yaad bohat atay hain Janan haath mein haath aur sar par barish تیز ہوا اور شب بھر بارش اندر چپ اور باہر بارش ایسے پہلے کب برسی تھیں آنکھیں اور برابر بارش صحرا تو پیاسے کا پیاسا اور بھرے دریا پر بارش اس سر تال کا اور مزا تھا کچے گھر کی چھت پر بارش جھوم رہے ہیں بھیگ رہے ہیں پیڑ پرندے منظر بارش میں نے بادل کو بھیجی تھی اک کاغذ پر لکھ کر بارش میرے اشکوں سے لکھے کو وہ پڑھتا ہے اکثر بارش کون یہ دیکھے دیدۂ پر نم اک بارش کے اندر بارش یاد بہت آتے ہیں جاناںؔ ہاتھ میں ہاتھ اور سر پر بارش

Firaq-e-yaar ki barish malaal ka mosam - Barish Poetry

  Firaq-E-yaar ki barish malaal ka mosam hamaray shehar mein Itra kamaal ka mosam woh ik dua jo meri namuraad lout aayi zuba se roth gaya phir sawal ka mosam bohat dinon se mere zehen ke derichoon mein thehr gaya hai tumahray khayaal ka mosam jo be yaqeen hon baharen ujar bhi sakti hain tu aa ke dekh le mere zawaal ka mosam muhabbaten bhi teri dhoop chaon jaisi hain kabhi yeh hijar kabhi yeh visale ka mosam koi mila hi nahi jis ko Sonpte Anjum hum apne khawab ki khushbu, khayaal ka mosam فراق یار کی بارش ملال کا موسم ہمارے شہر میں اترا کمال کا موسم وہ اک دعا جو میری نامراد لوٹ آئی زباں سے روٹھ گیا پھر سوال کا موسم بہت دنوں سے میرے ذہن کے دریچوں میں ٹھہر گیا ہے تمہارے خیال کا موسم جو بے یقیں ہوں بہاریں اجڑ بھی سکتی ہیں تو آ کے دیکھ لے میرے زوال کا موسم محبتیں بھی تیری دھوپ چھاؤں جیسی ہیں کبھی یہ ہجر کبھی یہ وصال کا موسم کوئی ملا ہی نہیں جس کو سونپتے انجم ہم اپنے خواب کی خوشبو، خیال کا موسم